تعارف

افتاد طبع تو کچھ ایسی تھی کہ خلوت میسر رہے اور پڑھتے رہیں تصور جاناں کئے ہوئے، مگر والد صاحب نے کہا کہ کچھ سائینس پڑھ ورنہ کھائے گا کہاں سے۔ چنانچہ طب کو چنا اور اندازہ ہوا کہ طب کا شغل بھی ادب پڑھنے سے کچھ زیادہ مختلف نہیں۔ سو ادب و طب سے جو مشاہدہ جات ہوئے ہیں، ان میں سے بعض کو اپنی یادداشت کیلئے یہاں لکھتا ہوں۔

کرداروں کے نام اور مقامات پرائیویسی کی وجہ سے تبدیل کر دئیے ہیں۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s